…جائے نماز پریا مسجد میں بچائی گئی صفوں پر کوئی تصویر چھپی ہو تو

  • -

…جائے نماز پریا مسجد میں بچائی گئی صفوں پر کوئی تصویر چھپی ہو تو

Sawaal:

کیا فرماتے ہین مفتی صاحبان اگرجائے نماز پریا مسجد میں بچائی گئی صفوں پر کوئی تصویر چھپی ہو تو کیا اس جائے نماز پر یا اس طرح بچھائی گئی تصاویر والی مسجد کی صفوں پر نماز ہو جائے گی؟
میں ایسی ایک مسجد کی صفوں کی کچھ تصاویر بھیج رہاہوں جس کے اوپرکتے جیسے جانور کی کچھ شکل چھپی نظر آتی ہین ، ، دو نمازیوں کے د رمیان جب تیسرا نمازی کھڑا ہوتا ہے تو اس کے سجدے کی جگہ پر یہ شکل آجاتی ہیں ، ہم اس مسجد کی کی صفوں پر چار پانچ سال سے نماز پڑھ رہے ہیں ،
1 کیا اس طرح تصاویر والی صفوں پر ہماری ری نماز ہوجائے گی؟
2کیا ان تصاویر والی صفوں کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے
3 اور جو نمازیں ہم پڑھ چکے ان کا کیا ہو گا؟
برائے کرم ہماری رہنمائی فرمائیں


Jawaab:

بسم الله الرحمن الرحيم


الجواب وبا اللہ التوفیق
اوّل تو کشش کریں کہ ایسے مصلی مساجد سے ہٹاۓ جائیں
پہر بہی اگر اس طرح کے مصلی پر نماز ادا کی جاۓ تو کراہیت سے تو خالی نہیں نماز تو ہوجائیگی مگر کراہیت کے ساتھ
بعض فقہاء تحریمی کے قائل ہیں بعض مکروہ بہر صورت کراہیت کے سبہی قائل ہیں اس لۓ بہتر یہی کہ مصلی تبدیل کۓ جائیں
بخاری روایت حضرت انس رضی اللہ عنہ
فتاوی ہندیہ
کتاب الفتاوی

Wallahu Ta’ala A’lam.
-Mufti Sanaullah Qasmi


Posted on 08 March 2018